نگراں حکومت نے تمام شعبوں میں عوامی مفاد کے لئے جاری منصوبوں کو جلد از جلد مکمل کروانے کا عزم کیا ہےنگراں صوبائی وزیر بلدیات، بحالیات، ہائوسنگ و ٹائون پلاننگ محمد مبین جمانی

خیرپور (نمائندہ خصوصی) نگراں صوبائی وزیر بلدیات، بحالیات، ہائوسنگ و ٹائون پلاننگ محمد مبین جمانی نے کہا ہے کہ سندھ حکومت نے صحت کے شعبہ میں جو جو اقدامات کئے ہیں وہ کسی اور صوبے میں نہیں ہوئے ہیں۔ موجودہ نگراں حکومت نے تمام شعبوں میں عوامی مفاد کے لئے جاری منصوبوں کو جلد از جلد مکمل کروانے کا عزم کیا ہے

۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کے روز خیرپور دورے کے پہلے روز شاہ عبدالطیف بھٹائی یونیورسٹی میں شہید مخدوم عبدالرحمان چیئر کا سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب میں بحیثیت مہمان خصوصی شرکت، محکمہ بحالیات کے تحت موبائل ہیلتھ کیئر یونٹ کی خیرپور میں سپردگی اور بعد ازاں ناز ہائی اسکول اولڈ بوائز ویلفیئر ایسوسی ایشن(نووا) کی جانب سے منعقدہ تقریب اور میڈیا نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر قائم مقام وائس چانسلر شاہ عبدالطیف بھٹائی یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر امانت علی، مخدوم ندیم، سیکریٹری بحالیات پرویز احمد سحر، پروجیکٹ ڈائریکٹر ڈاکٹر مہوش کلبانی، ڈپٹی کمشنر سید احمد فواد شاہ، ایس ایس پی ڈاکٹر سمیع اللہ سومرو، اے سی سید محمد علی شاہ، ڈائریکٹر ریسکیو 1122 کرنل (ر) سید سردار شاہ، اے ڈی پی ڈی ایم اے عبدالرحمن ایندھڑو ڈپٹی ڈائریکٹر انفارمیشن سید ساجد حسین شاہ دیگر افسران موجود تھے۔

مبین جمانی نے کہا کہ ہم نے کرپشن کے خاتمے کے لئے روڈ میپ بنانا شروع کردیا ہے امید کرتے ہیں کہ آنے والی حکومت اس پر عمل درآمد کرے گی۔ محمد مبین جمانی نے کہا کہ محکمہ بحالیات کے تحت مزید 5 اضلاع میں موبائل ہیلتھ یونٹس فراہم کی جارہی ہیں اور جلد مزید 4 دیگر موبائل ہیلتھ یونٹس دیگر اضلاع میں فراہم کی جائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ ریسکیو 1122 کے تحت 450 سے زائد ایمبولینس صوبے بھر میں عوامی خدمت پر مامور ہیں۔

مبین جمانی نے کہا کہ خیرپور میں موبائل ہیلتھ یونٹ کی فراہمی پر میں بحیثیت یہاں کے رہائشی محکمہ بحالیات کا مشکور ہوں۔ انہوں نے کہا کہ عوام میں اس موبائل ہیلتھ یونٹ کے حوالے سے آگاہی ضروری ہے تاکہ عوام کو مفت او پی ڈی، ایکسرے، سٹی اسکین، تمام اقسام کے لیبارٹری ٹیسٹ اور ادویات فراہم ہوسکیں۔ ہماری بھرپور کوشش ہے کہ ہم صوبے کے عوام کو زیادہ زیادہ صحت، تعلیم سمیت دیگر شعبوں میں سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنا سکیں۔ دوسری جانب شاہ عبدالطیف یونیورسٹی خیرپور میں شہید مخدوم عبدالرحمن چیئر کا سنگ بنیاد رکھ کر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کھڑا شریف کے مخدوموں نے عوام کی خدمت کی اور ان ان کا تصوف اور تاریخ کے حوالےسے زیادہ کام ہوا ہے چیئر نئی نسل کے لیے فائدہ مند ہوگی

محمد مبین جمانی نے کہا کہ وزارت عارضی ہوتی ہے لیکن ہم نے عوام کی خدمت کی اور کرتے رہیں گے انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنی والدہ کے نام پر ٹرسٹ کے توسط سے عوام کو سہولیات فراہم کی ہیں خواہ وہ طالبات کے تعلیمی مسائل، اخراجات، صحت کی سہولیات، بچیوں کی شادیاں اور دیگر خدمات شامل ہیں ۔نگراں صوبائی وزیر نے شاہ عبدالطیف یوبنیورسٹی کے نئے مقرر ہونے والے وائس چانسلر ڈاکٹر پروفیسر امانت علی جلبانی سے ملاقات کی اور یونیورسٹی کے معاملات پر تفصیل سے گفتگو کی ۔ دریں اثناء نگراں صوبائی وزیر محمد مبین جمانی نے لاء کالج خیرپور پہنچ کر اولڈ بوائے ویلفیئر ایسوسی ایشن ناز ہائی اسکول کی تقریب میں شرکت کی اس موقع پر معروف قانون دان صدر نوا پربھات سید صغیر حسین زیدی نے سپاسنامہ پیش کرتے ہوئے تعلیمی معیار کو بہتر بنانے کے حوالے سے چارٹر آف ڈیمانڈ پیش کیا اس موقع پر پریس کلب کے صدر خان محمدخان، ایڈوکیٹ صفدر بھٹی ، سینئر ایڈوکیٹ حبیب الرحمن شیخ، چیئرمین میونسپل کمیٹی یار محمد پھلپوٹو، ڈاکٹر مراد خمیسانی سمیت دیگر عمائدین شہر، ڈاکٹرز، معززین شہر، تاجران اور دیگر افراد بڑی تعداد میں موجود تھے

اس موقع پر نگراں صوبائی وزیر محمد مبین جمانی نے کہا کہ نوا پربھات کے کابینہ کی جانب سے جو بھی مطلوبہ گزارشات کی ہیں ان کو مرحلہ وار حل کیا جائے گا میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے محمد مبین جمانی نے کہا کہ تمام میونسپل کمیٹیوں کو اربوں روپے جاری کیے جاتے ہیں لیکن افسوس یہ پیسہ اسٹاف اور اوور اسٹاف کی تنخواہوں اور گھوسٹ ملازمین کی تنخواہوں میں پورا ہوجاتا ہے انہوں نے کہا کہ وہ 18 ذیلی محکموں کو دیکھ رہے ہیں ہم اپنے دور میں پوری ایمانداری کے ساتھ کام کررہے ہیں سب اچھا بھی نہیں اور سب برا بھی نہیں ہے نظام بہتر ہونا ضروری ہے جتنا فنڈ جاری ہوتا ہے اتنی ترقیاتی کام نہیں ہوتے ، ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ عوام کی تکالیف اور شہری مسائل کے لیے ادارے موجود ہیں صحافی اور عمائدین شہر آگے آئیں مسائل کے حل کے لیے تعاون کریں انہوں نے کہا کہ جہاں بھی بدعنوانی کو دیکھا اس کے خلاف بھرپور کاروائی کی ہے اور جب تک ہیں کرتے رہیں گے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Don`t copy text!