ایم کیو ایم اور پی پی ایک ہوتے تو بلاول وزیر اعظم ہوتے، مصطفیٰ کمال

تشکُّر نیوز رپورٹنگ،

ایم کیو ایم کے رہنما مصطفیٰ کمال نے کہا کہ مرکز میں حکومت سازی کے لیے ایم کیو ایم اور پی ایک ہوتے تو بلاول بھٹو وزیر اعظم ہوتے۔

ایم کیو ایم کے رہنما مصطفیٰ کمال نے کہا کہ کراچی میں پی پی پی کی 3 سیٹیں بھی نہیں ہیں، سندھ میں بائیس ارب روپے بھی نہیں لگے۔

 انہوں نے کہا کہ عام انتخابات سے پہلے جی ڈی اے نے الیکشن مہم ہی نہیں چلائی۔

پیپلزپارٹی نے کراچی میں کوئی کام نہیں کیا، 15 سال میں پی پی نے ہر جگہ اپنے لوگ لگائے۔

انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کو آر ٹی ایس کی عادت پڑی ہوئی ہے، پی ٹی آئی کو کارکردگی کا ووٹ نہیں ملا، بانی پی ٹی آئی سے محبت ہوتی تو21 سیٹیں نہ ہارتے۔

ایم کیو ایم کے رہنما کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی کی گورننس پر ہمارا موقف واضح ہے، ایم کیوایم اور پی پی ایک ہوتے تو بلاول بھٹو زرداری وزیراعظم ہوتے۔

ایم کیو ایم رہنما مصطفیٰ نے مزید کہا کہ ہم پر قبضہ نہ کرو ہمارے دل جیتو، ملک دلدل میں ہے محاذآرائی نہیں ہونی چاہئے پیپلزپارٹی کی گورننس پر ہمارا موقف واضح ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Don`t copy text!