عادی ملزمان کی مانیٹرنگ کے لیے جدید ٹیکنالوجی کے استعمال سے متعلق اقدامات کیے جائیں۔آئی جی سندھ رفعت مختارراجہ

تشکُّر نیوز رپورٹنگ،


ای مالخانہ ایپلیکیشن کوتجرباتی بنیادوں پر شروع کیا جائے۔ آئی جی سندھ رفعت مختارراجہ
مالخانوں سے غیرضروری سامان تلف کرنے کے حوالے سے بھی اقدامات کیے جائیں۔
ای شیٹ ایپلیکیشن پر60فیصدتک عمل درآمدکرنے والے اضلاع کے افسران کوتعریفی اسناد جبکہ اس سے کم والے کو تنبیہ کی جائے۔آئی جی سندھ

کراچی18,جنوری 2024:-

آئی جی سندھ رفعت مختار راجہ کی زیر صدارت سندھ صوبے کی پولیسنگ کو مزید مؤثر، مربوط اورجدید خطوط پراستوارکرنے سے متعلق ضروری اقدامات بشمول الیکٹرانک مال خانہ,الیکٹرانک ٹیگنگ آرایف آئی ڈی(RFID) ٹیگنگ,الیکٹرانک شیٹ و دیگر ایشوزکے حوالے سے سینٹرل پولیس آفس میں کراچی میں اہم اجلاس منعقد ہوا جس میں تمام اقدامات پر تفصیلی بحث کی گئی اور منظوری جیسے اقدامات کو حتمی شکل دینے کی بابت ہدایات دی گئیں۔
اجلاس میں شریک ڈی آئی جیز,ٹی اینڈ ٹی,ہیڈکوارٹرز,آئی ٹی,انویسٹی گیشن/کرائم,ایڈمن کراچی, سی آئی اے, اسٹیبلشمنٹ کے علاوہ ایم ٹی, فائنانس,آپریشنز, ایڈمن,ای اینڈ ایم, لاجسٹکس,لیگل کے اے آئی جیز اور پروجیکٹ ڈائریکٹر آئی ٹی نے متعلقہ شعبہ جات کے حوالے سے علیحدہ علیحدہ بریفنگز دیں اور جملہ امور کے بارے میں بتایا۔
اس موقع پر موجود ٹریکنگ کمپنیز کے نمائندگان نے ٹریکنگ ڈیوائسز اور اسکے تحت کیئے جانیوالے جملہ امور اور انکی ترجیحات پر بریفنگ دی اور ڈیوائسز کو ٹریکنگ سسٹم میں کس طرح مؤثر اور کارآمد بنایا جاسکتا ہے اسکے بارے میں بھی بتایا۔
آئی جی سندھ رفعت مختارراجہ نے ہدایات دیں کہ عادی ملزمان کی ٹریکنگ (tracking) اور ان پر مسلسل نگاہ رکھنے کے لیئے سیٹالائٹ بیسڈ ٹریکنگ سسٹم فراہم کرنے والوں سے رجوع کیا جائے۔ان کا کہنا تھا کہ ہمیں دور جدید کے تقاضوں کو مدنظر رکھتے ہوئے عادی ملزمان کی ٹریکنگ کو ماڈرن تیکنیکس کے استعمال جیسے اقدامات کی ضرورت ہے۔
آئی جی سندھ نے ہدایات دیں کہ آئین و قانون اور قواعد ضوابط کی مجموعی ترجیحات اور اصولوں پر دسترس رکھنے والے ماہرین کی مشاورت اور انکی تجاویز پر مشتمل عادی ملزمان مانٹرنگ رولز 2024(Habitual Offender Monitoring Rules 2024) کو جامع انداز میں ترتیب دینے کے تمام تر انتظامات کو یقینی بنایا جائے تاکہ قوانین کااطلاق اور پائیداری دیرپاہو۔

آئی جی سندھ کو بتایا گیا کہ ای شیٹ پر سندھ بھر سے 60%پولیس عملہ رجسٹرڈ کرکے جملہ عملی اقدامات جاری ہیں۔جبکہ باقی مانندہ عملہ کو بھی رجسٹرڈکیاجارہا ہے جس پر آئی جی سندھ نے احکامات دیے کہ ای شیٹ ایپلیکیشن پر60فیصدتک عمل درآمدکرنے والے اضلاع کے افسران کوتعریفی اسناد جبکہ اس سے کم والے کو تنبیہ کی جائے کہ فوری طور پر اپنے عملہ کا اندراج ممکن بنائیں اور اس ماہ کے آخرتک اپنی رپورٹ پیش کریں۔

آئی جی سندھ کو بتایا گی کہ سندھ بھر میں 6اضلاع کے مالخانہ جات کو مرمت کرکے ضلع پولیس انتظامیہ کے حوالے کیا جاچکا ہے جبکہ باقی مالخانوں کی مرمت جاری ہے جو جلد مکمل کرلی جائے گی جس پر آئی جی سندھ نے ہدایات دیں کہ ضلعی پولیس افسران,اعلٰی عدلیہ اور ڈپٹی کمشنرز کے ساتھ مربوط روابط اور باہمی تعاون سے مالخانوں میں موجود غیرضروری مواد کو تلف کرنے کے حوالے سے اقدامات کریں تاکہ مال خانوں سے غیرضروری سامان خارج کیا جاسکے۔مزید برآں آئی جی سندھ نے ہدایات دیں
کہ مرمت کیئے گئے مال خانوں کے امور کا آغاز تجرباتی طور پرای-مالخانہ ایپلیکیشن کے ذریعے کیا جائے اور اس حوالے سے درکار مزید ضروری سہولیات کی بابت سفارشات بھی ارسال کی جائیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Don`t copy text!