عمران خان کے میانوالی اور لاہور سے کاغذات نامزدگی مسترد

تشکُّر نیوز رپورٹنگ،

تحریک انصاف کے قائد این اے 122 اور این اے 89 سے الیکشن نہیں لڑسکیں گے

لاہور ( 30 دسمبر 2023ء ) پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کے میانوالی اور لاہور سے کاغذات نامزدگی مسترد کردیئے گئے۔ تفصیلات کے مطابق لاہور سے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 122 سے سابق وزیراعظم عمران خان کے کاغزات نامزدگی مسترد ہوچکے ہیں، اس کے علاوہ میانوالی کی ان کی آبائی نشست این اے 89 سے بھی قائد تحریک انصاف کے کاغذات نامزدگی مسترد کردیئے گئے ہیں،

جس کے نتیجے میں تحریک انصاف کے قائد این اے 122 اور این اے 89 سے الیکشن نہیں لڑسکیں گے۔بتایا گیا ہے کہ قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 214 تھر پارکر سے وائس چیئرمیر مین پی ٹی آئی شاہ محمود قریشی اور انبیٹے زین قریشی کے کاغزات نامزدگی بھی مسترد کردیئے گئے، تحریک انصاف کے رہنما زلفی بخاری کے این اے 50 اسلام آباد پر کاغذات نامزدگی مسترد کردیے گئے، زلفی بخاری نے وکلا، تائید و تجویز کنندہ کو حراست میں لینے پر ہائی کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

این اے 15 مانسہرہ میں اعظم سواتی کے کاغذات نامزدگی مسترد کردیے گئے، نواز شریف کے وکیل نے موقف اپنایا کہ الیکشن لڑنے والے امیدوار کا ملک میں ہونا ضروری ہے۔ سوشل سیکیورٹی واجبات کی عدم ادائیگی اور اثاثے ظاہر نہ کرنے پر این اے 71 سیالکوٹ میں عثمان ڈار کی والدہ اور اہلیہ کے کاغذات نامزدگی بھی مسترد کرریحانہ ڈار اور عروبہ ڈار نے خواجہ آصف کے مقابلے میں کاغذات جمع کروائے تھے۔بدین میں این اے 223 سے فہمیدہ مرزا، ذوالفقار مرزا اور حسام مرزا کے کاغذات نامزدگی مسترد کردیے گئے۔

ڈی آر او آفس کا کہنا ہے مرزا فیملی نجی بینک کی 21 کروڑ 19 لاکھ روپے کی ناہندہ ہے، اسٹیٹ بینک رپوٹ کی روشنی میں کاغذات نامزدگی مسترد کیے گئے۔ این اے 209 سانگھڑ میں جی ڈی اے کے امیدوار محمد خان جونیجو کے کاغذات تاحیات نااہلی کے باعث مسترد کردئے گئے۔ پی کے 26 بونیر پر 3 امیدواروں کے کاغذات نامزدگی مسترد کیے گئے جس میں پی ٹی آئی کے سالار جہان، اے این پی کے شجاعت علی خان اور شیر رحمان شامل ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Don`t copy text!