غزہ میں ہر 4 میں سے ایک فرد بھوک کے باعث موت کے منہ میں پہنچ چکا ہے، اقوام متحدہ

ویب ڈیسک،

غزہ میں خوراک کا بحران بہت زیادہ سنگین ہوچکا ہے اور ہر 4 میں سے ایک فرد بھوک کے باعث موت کے منہ میں پہنچ چکا ہے۔

یہ انکشاف اقوام متحدہ اور دیگر اداروں کی جانب سے جاری ایک رپورٹ میں کیا گیا جس میں اسرائیلی وحشیانہ کارروائیوں سے پیدا ہونے والے انسانی بحران پر روشنی ڈالی گئی۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ غزہ میں بھوک کی شکار آبادی کی شرح نے افغانستان اور یمن جیسے ممالک کو بھی پیچھے چھوڑ دیا ہے جہاں حالیہ برسوں میں قحط سالی کا سامنا ہوچکا ہے۔

رپورٹ میں خبردار کیا گیا کہ غزہ میں خوراک کا بحران ہر گزرتے دن کے ساتھ بدتر ہو رہا ہے اور اس کی وجہ وہاں ناکافی امداد پہنچنا ہے۔

اقوام متحدہ کے ورلڈ فوڈ پروگرام کے عہدیدار عارف حسین نے بتایا کہ ‘اس سے بدترین صورتحال ہو ہی نہیں سکتی، میں نے کبھی اتنے بڑے پیمانے پر اتنی تیزی سے حالات خراب ہوتے نہیں دیکھے’۔

یاد رہے کہ 7 اکتوبر سے جاری اسرائیلی جارحیت کے نتیجے میں غزہ کے 20 ہزار سے زائد شہری شہید ہوچکے ہیں جبکہ 52 ہزار سے زائد زخمی ہیں۔

شہید اور زخمی ہونے والے افراد میں نصف سے زائد تعداد بچوں اور خواتین پر مشتمل ہے جبکہ اسرائیلی وحشیانہ کارروائیوں میں لاکھوں افراد بے گھر ہو چکے ہیں۔

عالمی ادارہ صحت کے مطابق اسرائیلی جارحیت سے غزہ کا طبی نظام بھی منہدم ہو چکا ہے اور اس کے 36 میں سے محض 9 اسپتال جزوی طور پر فعال ہیں اور وہ سب جنوبی غزہ میں واقع ہیں۔

اقوام متحدہ کی جانب سے جاری رپورٹ کے مطابق گزشتہ ہفتوں کے دوران غزہ کو درکار خوراک کا محض 10 فیصد حصہ شہریوں تک پہنچا ہے۔

یہ رپورٹ اقوام متحدہ سمیت 23 اداروں نے مشترکہ طور پر تیار کرکے جاری کی ہے جس میں بتایا گیا کہ غزہ کے 5 لاکھ 76 ہزار 600 شہری بھوک کے باعث موت کے منہ میں پہنچ گئے ہیں۔

عارف حسین کے مطابق غزہ میں لگ بھگ ہر فرد ہی بھوکا ہے اور وہاں بڑے پیمانے پر امراض پھیل رہے ہیں کیونکہ غذائی کمی کے باعث لوگوں کا مدافعتی نظام بہت زیادہ کمزور ہو چکا ہے۔

اقوام متحدہ کی امدادی سرگرمیوں کے سربراہ Martin Griffiths نے بتایا کہ رپورٹ حیران کن نہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہم ہفتوں سے اس طرح کی صورتحال کا انتباہ کر رہے ہیں اور روزانہ کی بنیاد پر ہونے والی تباہی سے بھوک اور امراض ہی پھیل سکتے ہیں۔

یہ رپورٹ اس وقت جاری کی گئی ہے جب غزہ میں جنگ بندی کے لیے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد پر 4 روز سے ووٹنگ نہیں ہوسکی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Don`t copy text!