آئی ایم ایف، نئے پروگرام سے قبل ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم کے اطلاق کا مطالبہ

اسلام آباد: آئی ایم ایف نے ٹیکس چوری روکنے اور نئے لوگوں کو ٹیکس نیٹ میں لانے کیلیے نئے پروگرام سے قبل جدید ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم کے مکمل اطلاق کی تجویز دیدی۔ وزیراعظم نے ایف بی آرکی کارکردگی دیکھتے ہوئے معاملے کی ذاتی طورپر نگرانی کا فیصلہ کرلیا، حکام کو ہدایت کی کہ آئی ایم ایف کیساتھ طے شرائط پرمکمل عملدرآمد کیا جائے۔

ذرائع ایف بی آر کے مطابق مختلف شعبوں میں ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم کے بتدریج نفاذ کا عمل جاری اور اس کا دائرہ بتدریج بڑھایا جارہا ہے۔ادھر ذرائع وزارت خزانہ نے بتایا کہ آئی ایم ایف نے ایف بی آر کے زیرانتظام ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے تمام صنعتوں پر اس کے مکمل اطلاق کا مطالبہ کیا ہے۔

سگریٹ، چینی، کھاد اور سیمنٹ کی صنعتوں میں ٹیکس چوری روکنے کیلئے ایف بی آر نے موثراقدامات نہیں کیے، گزشتہ2 سال کے دوران کھاد کی صنعت کے علاوہ کہیں ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم کا اطلاق نہیں کرسکا۔

آئی ایم ایف نے مینوفیکچرنگ سیکٹرمیں خودکار ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم لگانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ نئے پروگرام سے قبل چاروں صنعتوں میں ٹریک اینڈ ٹریس کا اطلاق کیا جائے، نظام میں شامل نہ ہونیوالے یونٹس سیل کردیئے جائیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Don`t copy text!