بابر اعظم تیزی سیکھنے والے انسان نہیں ہیں: جنید خان

سابق فاسٹ بولر جنید خان نے کہا ہے کہ بابر تیزی سے سیکھنے والے انسان نہیں ہیں جب کہ 4 سال میں بہتری نہ آئی۔ 15 نومبر کو بابر اعظم نے پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کی مینجمنٹ کمیٹی کے چیئرمین ذکا اشرف سے ملاقات کے بعد تمام فارمیٹس کی کپتانی سے استعفیٰ دے دیا۔ پی سی بی نے اس کے بعد شان مسعود کو پاکستان مینز کرکٹ ٹیم کا ٹیسٹ کپتان مقرر کیا جبکہ شاہین شاہ آفریدی کو ٹی ٹوئنٹی کا کپتان مقرر کیا گیا۔

ایک مقامی یوٹیوب چینل کے ساتھ ایک حالیہ پوڈ کاسٹ میں جنید خان نے بابر اعظم کی قائدانہ صلاحیتوں کا تجزیہ کرنے کا موقع لیا اور کہا کہ اسٹار بلے باز بطور کپتان اپنے کردار میں ترقی کرنے میں ناکام رہے ہیں۔ سابق تیز گیند باز نے بطور کپتان 29 سالہ بیٹر کی خاص طور پر ون ڈے فارمیٹ میں کامیابیوں کی ساکھ پر شک ظاہر کیا۔

جنید خان نے کہا کہ "بابر اعظم کی کپتانی میں کوئی بہتری نہیں آئی، اگر آپ ان کے مقابلے میں سرفراز احمد کو دیکھیں تو وہ دن بہ دن بہتری کی طرف گامزن ہیں۔

ہم نے ان کی قیادت میں چیمپئنز ٹرافی جیتی اور ٹی ٹونٹی میں عالمی نمبر ایک بن گئے، لوگ کہتے ہیں کہ ہم بابر کی کپتانی میں ون ڈے نمبر 1 ٹیم بن گئے لیکن ہم کمزور ٹیموں کے خلاف کھیل کر نمبر 1 بن گئے۔ بابر تیزی سے سیکھنے والا نہیں ہے، وہ عالمی معیار کا بلے باز ہے لیکن اس کی کپتانی اچھی نہیں تھی”۔ بین الاقوامی کپتانوں کے ساتھ موازنہ کرتے ہوئے جنہوں نے کامیابی کا مزہ چکھا ہے، سابق بائیں ہاتھ کے تیز گیند باز نے پیٹ کمنز اور ویرات کوہلی جیسے کھلاڑیوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے جارحیت کی اہمیت پر زور دیا۔

جنید خان کا کہنا تھا کہ "پیٹ کمنز کو دیکھو اس نے آسٹریلیا کے لیے ون ڈے ورلڈ کپ جیتا تھا۔ وہ جارح مزاج ہے، وہ بات کرتا ہے۔ ویرات کوہلی نے بھی جدوجہد کی لیکن ان میں یہ جارحیت ہے۔ ایم ایس دھونی کے ریٹائر ہونے کے بعد بھی انھوں نے جدوجہد کی لیکن ان کا اب بھی اچھا ریکارڈ ہے۔ لوگ کہیں گے دھونی اور سٹیفن فلیمنگ جارحانہ نہیں تھے لیکن وہ جانتے ہیں کہ ٹیم کو کیسے لیڈ کرنا ہے، بابر اعظم میں یہ خصوصیات نہیں ہیں، آپ کو لڑکوں کی حوصلہ افزائی کے لیے جارحیت کا مظاہرہ کرنے کی ضرورت ہے، انہوں نے چار سال تک تمام فارمیٹس کی کپتانی کی لیکن کوئی ترقی نہیں ہوئی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Don`t copy text!